Pakistan latest updates, breaking news, news in urdu

تیس ہزارمتاثرین پنشنرز کاانصاف کی فراہمی کیلئے چیف جسٹس کو خط

نظرثانی اپیل زیر التوائ،کیس روزانہ کی بنیاد پر سناجائے ،خط کا متن

320
Spread the love

اسلام آباد :متاثرین بینک پنشنرز نے انصاف کی فراہمی کیلئے چیف جسٹس آف پاکستان سے اپیل کر دی ،2017 کی نظرثانی اپیل زیر سماعت ہے ،درخواست جلد سماعت کیلئے مقرر کر کے روزانہ کی بنیاد پر کیس سنا جائے۔تفصیلات کے مطابق قومی بینک کے 15 ہزار پنشنرز اور15 بیوہ پنشنرز نے چیف جسٹس گلزار احمد کے نام ایک خط لکھا ہے جس میں متاثرین بینک نے کہا ہے کہ نیشنل بینک نے ایک آرڈیننس کے ساتھ 9 نومبر 1949 میں قائم کیا۔ حکومت پاکستان کے ساتھ ایک پنشن فارمولہ تھا لیکن 1999 میں بینک کے صدر ایک صوبے کی گورنری کی خواہش رکھتے تھے ، لہذا حکومت کی طرف سے ، خاص طور پر اس وقت کے وزیر خزانہ خیر سگالی کے لئے اس نے پنشن فارمولہ کو 70 فیصد سے کم کر دیا۔ ۔ ایل ایچ سی سنگل اور ڈبل بنچ نے سن 2016 میں پنشنرز کے حق میں کیس کا فیصلہ کیا۔ بینک نے 24.10.2017 کو نظرثانی کی درخواست دائر کی اور اب بھی زیر التوا ہے۔ متاثرین بینک کی جانب سے دائر نظرثانی کیس کو روزانہ کی بنیاد پر سن کر جلد انصاف فراہم کیا جائے ۔