Pakistan latest updates, breaking news, news in urdu

پنجاب میں وزیراعلیٰ بزدارہی رہیں گے،وزیراعظم عمران

پنجاب میں کرپشن ختم نہ ہونے پروزیراعظم برہم ،کارکردگی بہترکرنیکی ہدایت

249
Spread the love

لاہو:حکومتی ذرائع کے مطابق وزیراعظم نے ایک مرتبہ پھر عثمان بزدار پر اعتماد کا اظہار کر دیا۔ عمران خان نے واضح کرتے ہوئے کہا پنجاب کے وزیراعلیٰ عثمان بزدار ہی رہیں گے۔وزیراعظم سے ایوان وزیراعلیٰ میں عثمان بزادر نے ملاقات کی۔ عمران خان نے عوامی ریلیف کے لئے حکومت پنجاب کے اقدامات پر اطمینان کا اظہار کیا۔ وزیراعظم نے ریور راوی فرنٹ اتھارٹی کے قیام اور پنجاب میں جاری ترقیاتی منصوبوں سمیت دیگر کارکردگی کو سراہا۔اس موقع پر عمران خان نے کہا سمارٹ لاک ڈاؤن پر حکومت کی جانب سے ایس او پیز پر زبردست عملدآمد کروایا، حکومتی اقدامات کے باعث کورونا وائرس کے کیسز میں واضح کمی ہوئی، اب حالات بہتر ہو رہے ہیں، عوام کو حکومتی ایس او پیز پر عملدآمد کرنا اور حکومت کا ساتھ دیتے رہنا ہوگا۔وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے وزیراعظم کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا پنجاب حکومت نے اپنے اخراجات میں واضح کمی کی ہے، لاہور کے شمال میں جدید شہر بسانے کے لئے ریور راوی فرنٹ اتھارٹی قائم کی ہے، اتھارٹی نیا شہر بسانے کیلئے کام کرے گی، نیا شہر دبئی کی طرز پر بسایا جائے گا، نیا شہر ایک لاکھ ایکڑ سے زائد رقبے پر بنایا جائے گا، نجی شعبے کی جانب سے 5 ہزار ارب روپے کی سرمایہ کاری متوقع ہے۔دریں اثنا وزیراظعم نے لاہور میں شجرکاری مہم کا افتتاح بھی کیا۔،پنجاب میں کرپشن ختم نہ ہونے پر وزیراعظم عمران خان نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ادارے ناسور کو ختم کرنے کے لیے ٹھوس اقدامات اٹھائیں۔تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے پنجاب میں ممبران اسمبلی سے ملاقات کی ہے۔ وزیراعطم پنجاب میں کرپشن ختم نہ ہونے پر برس پڑے۔ملاقات کے دوران عمران خان کا کہنا تھا کہ پنجاب میں نچلی سطح پر کرپشن ختم ابھی تک نہ ہو سکی، ادارے کیا کر رہے ہیں۔ صوبے میں کرپشن ختم کرنے کےلئے ٹھوس اقدامات کئے جائیں۔ کرپشن سے متعلق مجھے میانوالی ،لاہور اور دیگر اضلاع سے بہت کچھ پتا چلا ہے۔ملاقات کے دوران ایم این اے ریاض فتیانہ نے وزیراعظم عمران خان سے درخواست کی جو علاقے بجلی سے محروم ہیں وہاں بجلی مہیا کی جائے۔س وزیراعظم نے حکم جاری کرتے ہوئے کہا کہ یہ بات درست ہے جن علاقوں میں بجلی نہیں وہاں ہونی چاہیے، بجلی کی فراہمی کےلئے وفاق و صوبے ملکر کام کریں تاکہ بچے پڑھ سکیں۔