Official Web

پٹرول بحران کےذمہ داروں کومنطقی انجام تک پہنچائیں گے:وزیراعظم عمران

بارشوں کے بعدلگتاہے کراچی میں کوئی حکومت ہی نہیں،شبلی فراز،بریفنگ

229
Spread the love

اسلام آباد:وزیراعظم نے پٹرول بحران کے ذمہ داروں کو منطقی انجام تک پہنچانے کا اعلان کر دیا۔ انہوں نے کہا چینی اور گندم بحران ہرگز برداشت نہیں کیا جائے گا۔وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ اجلاس میں پٹرول بحران کیلئے کمیشن قائم کرنے کی منظوری دی گئی۔ پی آئی اے کے چارٹر لائسنس اور ایریل ورک کی تجدید اور اسلام آباد میں گھروں میں کام کرنے والے ورکرز کے تحفظ بل کی بھی منظوری دے دی گئی۔ وفاقی کابینہ نے 10 لاکھ ٹن گندم درآمد کرنے کی منظوری دے دی۔ذرائع کے مطابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پٹرولیم بحران پر انکوائری کمیشن کے سربراہ اور اراکین کا تقرر جلد کرلیا جائیگا، گندم اور چینی کی فراہمی ہر حال میں یقینی بنائی جائے، صوبائی حکومتیں مافیا کے خلاف کریک ڈاؤن کریں۔ وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز نے کہا ہے کہ لگتا ہے کراچی میں کوئی حکومت ہی نہیں اور کراچی والوں کوسندھ حکومت کےرحم وکرم پرنہیں چھوڑاجاسکتا۔وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز نے اسلام آباد میں میڈیا بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ کابینہ اجلاس میں کراچی کی صورتحال پربات چیت ہوئی جہاں کے شہری بارش کےباعث مشکلات کاشکارہیں۔وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا کہ حالیہ بارش سے کراچی میں نکاسی آب کا نظام کا پول کھول گیا، کراچی کی صورتحال دیکھ کر لگتا ہے وہاں کوئی حکومت ہی نہیں، شہر قائد کا اربوں کھربوں روپےکابجٹ پتانہیں کہاں استعمال ہوا؟، سندھ میں اداروں،انفراسٹرکچرپرپوری توجہ نہیں دی گئی، جن کی سندھ میں اب تک حکومت ہے وہ جواب دیں فنڈز کہاں خرچ ہوئے۔کابینہ اجلاس کے بعد بریفنگ دیتے ہوئےوفاقی وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت نے کراچی اور سندھ کی ترقی کے لیے کوئی کام نہیں کیا، سندھ پر پی پی پی کی طویل عرصے سے حکومت ہے، ان کی کارکردگی سامنے ہے لوگوں کو کتنی تکلیف سے گزرنا پڑا۔شبلی فراز نے بتایا کہ کسی بھی مہذب ملک میں یہ صورتحال کافی تکلیف دہ ہے، بہت سارے لوگوں کا نقصان ہوا اور تکالیف سے گزارنا پڑا، اب بہت سی بیماریاں پھیلیں گی، وفاقی حکومت کراچی کے لیے جو کرسکی وہ کرے گی، کراچی کے عوام کو سندھ حکومت کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑا، کراچی کے ایم پی ایز اور ایم این ایز کو لوگوں سے رابطے کیلئے کہا ہے۔وفاقی وزیر اطلاعات نے مزید کہا کہ کراچی میں سیوریج کا نظام ہی نہیں، سندھ حکومت نے اپنی نااہلی کا منہ بولتا ثبوت دیا ہے، اسے چاہیے کہ کراچی کے عوام کی تکالیف کے ازالے کے لیے فوری اقدامات کرے، پارلیمنٹ میں اس پر بات ہوگی، سندھ حکومت اس حوالے سے ذمہ دار ہے اور جواب دہ ہے۔اپوزیشن کی ملاقاتوں پر شبلی فراز نے کہا کہ پی پی پی اور ن لیگ کے قول و فعل میں واضح تضاد ہے، ان کی بغل میں چھری اور منہ میں رام رام والی مثال ہے، ان کا کچھ بننا نہیں۔